مقبوضہ جموں وکشمیر میں مسلسل خوف و دہشت کا ماحول ہے ، مولانا غلام نبی نوشہری کشمیرایک کھلی جیل بن گیا ہر پانچ سے سات افراد پر ایک بھارتی سپاہی تعینات ہے

اسلام آباد() جماعت اسلامی مقبوضہ کشمیر کے رہنماسابق رکن مقبوضہ کشمیر اسمبلی مولانا غلام نبی نوشہری نے کہا ہے 5 اگست 2019  کے بعد مقبوضہ جموں وکشمیر میں مسلسل خوف و دہشت کا ماحول ہے ، کشمیر کی پوری آبادی  ایک کھلی جیل میں رہ رہی ہے جہاں ہر پانچ سے سات افراد پر ایک بھارتی سپاہی تعینات ہے ۔ انہوں نے مقبوضہ کشمیر کی صورت حال کو انتہائی تشویشناک قرار دیتے ہوئے اقوام متحدہ   سے  مطالبہ کیا ہے کہ ،  اس صورت حال کا نوٹس لیا جائے کشمیریوں کو جیل سے رہائی دلائی جائے ۔مولانا غلام نبی نوشہری کی بہن کا دو روز قبل سری نگر میں انتقال ہو گیا تھا۔ زوجہ نور الدین پنڈت سری نگر میں مقیم اور علیل تھی ،سری نگر میں ہی سپردخاک کیا گیا ہے۔ تعزیت کے لیے گھر آنے والوں سے بات چیت میں مولانا غلام نبی نوشہری نے جموں وکشمیر میں مسلسل خوف اور عدم تحفظ کے احساس کا ذکر کیا انہوں نے کہا کہ سری نگر سمیت ہر جگہ لوگ  بھارتی جبر سے سہمے ہوئے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ  بھارت ظلم وجبر سے کشمیر یوں کو  آزادی کے مطالبے سے دستبردار کرانا چاہتا ہے ۔ بھارت مقبوضہ کشمیر میںجغرافیائی تبدیلی لانا چاہتا ہے، تاکہ وہاںپر مسلمانوں کی تعداد کو کم کیا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ ، کشمیری مودی سرکار کے ان اقدامات کو کسی صورت تسلیم نہیں کریں گئے، انہوں نے کہا کہ کشمیریوں نے تحریک آزادی کے لیے بے شمار قربانیاں دی ہیں  یہ قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی ۔، انہوں نے عالمی بردار سے بھی مطالبہ کیا ہے کہ وہ بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر میں جاری انسانیت سوز مظالم کو نوٹس لیتے ہوئے کشمیریوں کی نسل کشی بند کروائیں۔ مولانا غلام نبی نوشہری نے ان تمام افراد کا شکریہ ادا کیا ہے جنہوں نے ان کہ بہن کے انتقال پر تعزیت کا اظہار کیا ہے ۔ نوشہری نے کہا ہے کہ تعزیتی پیغامات موصول ہونے کا سلسلہ برابر جاری ہے ۔ہم ان تمام افراد اور اداروں کے تہہ دل سے شکر گزار ہیں جنہوں نے بلا واسطہ یا بالواسطہ طور پر تعزیت کا اظہار کیا اور ہماری ڈھارس بندھائی ۔ اللہ تعالی سب کو جزائے خیر عطا فرمائے ۔ آمین