اسلام آباد ہائیکورٹ نے چینی انکوائری کمیشن کیس کا فیصلہ سنا دیا

عدالت نے چینی انکوائری کمیشن کی رپورٹ کو درست قرار دے دیا، عدالت نے شوگر ملز مالکان کی انٹراکورٹ اپیلیں مسترد کردی ہیں۔ اسلام آباد ہائیکورٹ کا فیصلہ

اسلام آباد اسلام آباد ہائیکورٹ نے چینی انکوائری کمیشن کیس کا فیصلہ سنا دیا ہے، عدالت نے چینی انکوائری کمیشن کی رپورٹ کو درست قرار دے دیا ، عدالت نے شوگر ملز مالکان کی انٹراکورٹ اپیلیں مسترد کردی ہیں۔ تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ نے چینی انکوائری کمیشن کیس کا فیصلہ سنا دیا ہے، اسلام آباد ہائیکورٹ نے چینی انکوائری کمیشن کی رپورٹ کو درست قرار دے دیا ہے، جبکہ عدالت نے شوگر ملز مالکان کی انٹراکورٹ اپیلیں مسترد کردی ہیں۔جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب اور جسٹس لبنیٰ سلیم پرویز نے انٹراکورٹ اپیل کی سماعت کی تھی۔اب دورکنی بنچ نے فیصلہ سنا دیا ہے۔اسلام آبا د ہائیکورٹ نے شوگر ملز مالکان کی انٹراکورٹ اپیل پر 24جولائی کو فیصلہ محفوظ کیا تھا۔واضح رہے اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس عامرفاروق اور جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب پر مشتمل ڈویژن بنچ نے24جولائی کو چینی انکوائری کے خلاف شوگرملزکی انٹراکورٹ اپیل پر فیصلہ محفوظ کرتے ہوئے شوگرملزکے وکیل مخدوم علی خان کو بدھ تک تحریری دلائل جمع کرانے کی ہدایت کی تھی۔

سماعت شروع ہونے پر شوگرملز کے وکیل مخدوم علی خان نے جواب الجواب دلائل میں کمیشن تشکیل میں بے ضابطگیوں پرکہا کہ کسی بھی معاملے پر سمری کابینہ ڈویڑن سے ہی بھیجی جاتی ہے، مخدوم علی خان کی جانب سے 1991 کے سپریم کورٹ فیصلے کا حوالہ دیا جس پرجواب میں اٹارنی جنرل نے جواب میں 2017 کے فیصلے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ جس شعبے میں بحران پیدا ہوا اس سے متعلقہ وزارت انکوائری کی سمری بھیجتی ہے،ایسا تب ہوتا ہے جب تحقیقات کا فیصلہ متعلقہ وزارت نے کیا ہو،اس بار چینی اسکینڈل کی تحقیقات کا فیصلہ وزیراعظم کا تھا، وزیراعظم تحقیقات کے احکامات جاری کرنے کا اختیار رکھتے ہیں، یہ اعتراض درست نہیں کہ پہلے کوئی سمری بھیجی جانا ہی ضروری تھی، فریقین کے دلائل مکمل ہونے پر عدالت نے فیصلہ محفوظ کرتے ہوئے مخدوم علی خان کو بدھ تک قانونی نکات پر تحریری دلائل جمع کرانے کی ہدایت کی تھی۔

via urdupoint news