متوازی فیڈریشنز نئے کیلنڈر کو حتمی شکل دینے میں ناکام

متوازی فیڈریشنز نئے کیلنڈر کو حتمی شکل دینے میں ناکام

ملک میں موجود کھیلوں کی متوازی فیڈریشنز نئے سال کے قومی اور عالمی کیلنڈر کو حتمی شکل دینے میں کامیاب نہ ہوسکیں، جس کی وجہ سے کھلاڑی پریشانی کا شکار ہیں۔

اس حوالے سے بین الصوبائی رابطے کی وزارت کے ذرائع کا کہنا ہے کہ وفاقی وزیر بین الصوبائی رابطہ ڈاکٹر فہمیدہ مرزا نے اس ماہ کے آخر میں اس حوالے سے اہم اجلاس بلانے کا فیصلہ کیا ہے۔

ملک میں دو قومی ٹیبل ٹینس فیڈریشنز کی وجہ سے پچھلے سال قومی کھلاڑی کئی عالمی اور ایشیائی ایونٹس میں شرکت سے محروم رہے ہیں، پاکستان اولمپک اور پاکستان اسپورٹس بورڈ دونوں کھیلوں کے اہم ادارے ایک ایک فیڈریشن کی پشت پر ہیں، تاہم نئی حکومت کے آنے کے ڈیرھ سال کا عرصہ گزرنے کے باوجود بین الصوبائی رابطے کی وزارت ملک میں متوازی فیڈریشن کے مسئلے کو حل کرنے میں ناکام رہی ہے، جس کا زیادہ نقصان کھلاڑیوں کو پہنچ رہا ہے۔

پاکستان اسپورٹس بورڈ کے حکام اس اجلاس سے قبل وفاقی وزیر کو ملک میں متوازی فیڈریشنز کے بارے میں تفصیلی بریفننگ دیں گے، اس بات کی بھی اطلاعات ہیں کہ بین الصوبائی وزارت نے متوازی فیڈریشنز کے خاتمے کے لیے پہلے مرحلے میں دونوں فیڈریشنر کے عہدے داروں کو نئے انتخابات پر راضی کرنے کا فیصلہ کیا ہے، جبکہ ان کی عالمی تنظیم سے بھی اس حوالے سے رائے لی جائے گی۔

دونوں متوازی فیڈریشنز کے ذمے دار اگر نئے انتخابات پر راضی نہیں ہوئے تو ان پر پابندی لگاکر ایڈہاک کمیٹی قائم کی جائے گی جو تین ماہ میں الیکشن کروائے گی۔

دوسری جانب پاکستان اولمپکس ایسوسی ایشن کے حکام کا موقف ہے کہ جس فیڈریشن کو اس کی عالمی باڈی تسلیم کرے گی، پی او اے اس کی ٹیم کو بیرون ملک عالمی اور ایشیائی ایونٹ میں شرکت کے لیے اجازت دے گی۔