ہندوستانی انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ نے سری نگر ، دہلی میں پی ڈی پی کے سابق ایم ایل اے کے گھروں پر چھاپہ مارا

سرینگر 24 دسمبر :  مقبوضہ جموں و کشمیر میں ہندوستانی انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ نے پی ڈی پی صدر محبوبہ مفتی کے قریبی ساتھی انجم فاضلی کے احاطے میں چوری کے بعد ایک رقم کے سلسلے میں 28 لاکھ روپے سے زائد کی نقدی ضبط کرلی ہے۔ لانڈرنگ کا معاملہ

سری نگر اور نئی دہلی میں پارٹی کے سابق ایم ایل اے کے گھر پر تلاشی لی گئی۔

عہدیداروں نے بتایا کہ 21،38،200 روپے نقد رقم سری نگر میں واقع ان کی رہائش گاہ سے پکڑی گئی جبکہ بھارتی دارالحکومت میں ان کی رہائش گاہ سے مزید 662،500 روپے برآمد ہوئے۔ عہدیداروں نے مزید بتایا کہ مجموعی طور پر نقد ضبطی صرف 28 لاکھ روپے سے زیادہ ہے۔

ای ڈی نے فاضلی کے سرینگر مقام پر تلاشی کے دوران 67،29،490 روپے مالیت کی ایک درجن فکسڈ ڈپازٹ رسیدیں بھی برآمد کیں۔ انہوں نے بتایا کہ یہ چھاپے جے اینڈ کے بینک میں مبینہ دھوکہ دہی سے متعلق تحقیقات کے سلسلے میں مزید شواہد اکٹھا کرنے کے لئے انجام دیئے گئے تھے۔

عہدیداروں نے بتایا کہ اس معاملے میں فاضلی کے کردار کی جانچ پڑتال کی جارہی ہے جس کی روک تھام منی لانڈرنگ (پی ایم ایل اے) کی مجرمانہ دفعات کے تحت کی جارہی ہے۔

دریں اثنا پی ڈی پی صدر محبوبہ مفتی نے سری نگر میں اپنی  گپکارکی رہائش گاہ پر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی حکومت بھارتی ایجنسیوں کو ان کے کنبہ کے ممبروں اور پارٹی کارکنوں کو نشانہ بنانے کے لئے استعمال کررہی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ “جادوگرنی” کے بجائے ہندوستانی حکومت کو “مجھ سے سیاسی طور پر لڑنا چاہئے”۔

محبوبہ نے کہا ، “میں بی جے پی کے تمام رہنماؤں سے کہنا چاہتا ہوں کہ وہ مجھ سے سیاسی طور پر لڑیں لیکن این آئی اے ، ای ڈی یا سی بی آئی کے ذریعے نہیں جو حکومت سنجیدہ معاملات کی تحقیقات کرنے والی سنجیدہ ایجنسیوں کی بجائے اپنی مالکن کی طرح سلوک کررہی ہے۔”

“پچھلے دو سالوں سے وہ میری پارٹی کے مشاعرے لکھ رہے ہیں۔ اگر وہ سیاسی طور پر لڑ نہیں سکتے ہیں تو یہ میرا مسئلہ نہیں ہے۔ مفتی نے کہا کہ حکومت کی جانب سے ای ڈی ، سی بی آئی ، این آئی اے کا غلط استعمال کیا جارہا ہے اور انہوں نے آئین کو ٹکڑوں میں پھینک دیا ہے۔