دنیامقبوضہ جموں وکشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین صورتحال کا نوٹس لے: نعیم خان

نئی دہلی07دسمبر()غیر قانونی طورپر نظربندکل جماعتی حریت کانفرنس کے سینئر رہنما نعیم احمد خان نے کشمیر کے حوالے سے نریندر مودی کی فسطائی بھارتی حکومت کی جارحانہ پالیسی کی مذمت کرتے ہوئے بااثر عالمی حکومتوں پر زور دیا ہے کہ وہ مقبوضہ جموں وکشمیر میں تیزی سے بگڑتی ہوئی سیاسی اور انسانی صورت حال کا نوٹس لیں۔
نعیم احمد خان نے نئی دہلی کی بدنام زمانہ تہاڑ جیل سے اپنے ایک پیغام میں کہا کہ مودی حکومت نے مقبوضہ جموں وکشمیرکو اس کے باشندوں کے لیے جہنم بنادیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مودی حکومت نے کشمیریوں سے جینے کے حق سمیت تمام حقوق چھین لئے ہیں اور ان کی جان و مال سفاک بھارتی فوجیوں کے رحم و کرم پر ہیں۔حریت رہنما نے کہا کہ مقبوضہ علاقے میں ماورائے عدالت قتل، جبری گمشدگیاں، عام شہریوں کو ہراساں کرنا ، ان کی تذلیل کرنا، جبری گرفتاریاں اور انسانی حقوق کے کارکنوں پر حملے کرناایک معمول بن چکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بھارت کشمیریوں کی حق خودارادیت کی جائز جدوجہد کو دبانے کے لیے نوآبادیاتی دور کے ہتھکنڈے استعمال کر رہا ہے۔ تاہم انہوں نے کہا کہ ظلم اور جبر کی پالیسی کشمیری عوام کو ان کی جائز جدوجہد سے باز نہیں رکھ سکتی۔نعیم خان نے کہا کہ تحریک آزادی کا بیڑہ اٹھانے والے کشمیر ی نوجوان اپنے مادر وطن کی آزادی کے لیے اپنی قیمتی جانوں کا نذرانہ پیش کرکے بھارت کے ناجائز قبضے کے خلاف مزاحمت کی ایک نئی تاریخ رقم کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بھارت کو اس حقیقت کو ذہن میں رکھنا چاہیے کہ طاقت کے استعمال سے حقیقی آزادی کی تحریکوں کو دبایا نہیں جا سکتا۔حریت رہنما نے افسوس کا اظہار کیا کہ بھارتی حکومت بین الاقوامی قانون اور اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کی کھلی خلاف ورزی کرتے ہوئے سیاسی اور انتظامی سازشوں کے ذریعے مقبوضہ جموں وکشمیر میںآبادی کاتناسب تبدیل کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اب وقت آگیا ہے کہ دنیا آگے آئے اور کشمیریوں کے خلاف کھلی جارحیت کو روکنے کے لیے بھارتی حکومت پر دبائو ڈالے۔انہوں نے مقبوضہ جموں وکشمیراور بھارت کی مختلف جیلوں میں غیر قانونی طور پر نظر بند کشمیریوں کی حالت زار پر بھی شدید تشویش کا اظہار کیا اور انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں سے اپیل کی کہ وہ ان کی فوری رہائی کے لیے اپنا موثر کردار ادا کریں۔