کل جماعتی حریت کانفرنس کے رہنماﺅں کی یوم آزادی پر پاکستانی عوام ، حکومت کو مبارکباد

سرینگر 13 اگست (کے پی این) بھارت کے غیر قانونی زیر قبضہ جموں و کشمیر میں کل جماعتی حریت کانفرنس کے رہنماوں نے کل (اتوار) منائے جانے والے یوم آزادی کے موقع پر پاکستان کے عوام اور حکومت کو مبارکباد دی ہے۔
کل جماعتی حریت کانفرنس کے غیر قانونی طور پر نظربند نائب چیئرمین شبیر احمد شاہ نے نئی دہلی کی تہاڑ جیل سے بھیجے گئے اور سری نگر میں جاری کیے گئے ایک پیغام میں 75ویں یوم آزادی پر پاکستانی قوم کیلئے نیک تمناو¿ں کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی طرف سے کشمیر کاز کی مسلسل سیاسی، اخلاقی اور سفارتی حمایت پر کشمیری اسکے شکر گزار ہیں۔
کل جماعتی حریت کانفرنس کے سینئر رہنما میر واعظ عمر فاروق نے سرینگر میں جاری ایک بیان میں مقبوضہ جموںوکشمیرکے لوگوں سے کہا کہ وہ بھارتی حکومت کی مسئلہ کشمیر کو حل نہ کرنے کی پالیسی اور اس کے نتیجے میں ہونے والے شدید جبر کے خلاف 15 اگست کو یوم سیاہ کے طور پر منا کر اپنا بھرپور احتجاج درج کریں۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ 75 سالوں سے کشمیری عوام حق خودارادیت کا مطالبہ کر رہے ہیں جس کا وعدہ بھارتی قیادت نے ان سے نہ صرف اقوام متحدہ اور بھارتی پارلیمنٹ میں کیا تھا بلکہ سری نگر کے لال چوک میں اس کا اعادہ کسی اور نے نہیں کیا بلکہ وزیراعظم پنڈت جواہر لال نہرونے خود کیاتھا تاہم آج تک نہ صرف یہ وعدہ پورا نہیں ہوا بلکہ جو لوگ اس کی یاد دلاتے ہیں انہیں گرفتاریوں اور قید و بند کی سزا دی جاتی ہے۔
میرواعظ نے کہا کہ ایک ایسا ملک جو اپنے آپ کو ایک نمائندہ جمہوریت کے طور پر پیش کرتا ہے کشمیری عوام پر زبردستی اپنی مرضی مسلط کرنے کے لیے ظلم اور جبر کر رہا ہے۔ انہوںنے کہا کہ کشمیریوں کی امنگوں کو دبانے کے لیے بھارتی فورسز کے لاکھوں اہلکار تعینات اور آرمڈ فورسز اسپیشل پاورز ایکٹ اور پبلک سیفٹی ایکٹ جیسے کالے قوانین نافذ کیے گئے ہیں۔ انہوںنے کہا کہ پوری آزادی پسند قیادت کے ساتھ ساتھ ہزاروں لوگ مقبوضہ علاقے او بھارتی جیلوںمیں بند کیے گئے ہیں جن کا واحد جرم بنیادی انسانی اور سیاسی حقوق کی بحالی کا مطالبہ ہے۔
کل جماعتی حریت کانفرنس کے غیر قانونی طو ر پر نظر بند رہنما نعیم احمد خان نے تہاڑ جیل سے اپنے پیغام میں کہا کہ مقبوضہ جموںوکشمیر کے مظلوم عوام اپنے حق خودارادیت کے حصول کے لیے منصفانہ جدوجہد کی غیر متزلزل حمایت پر اسلامی جمہوریہ پاکستان کے بے حد مشکور ہیں۔ انہوں نے امید کا اظہار کیا کہ ارض پاک کی موجودہ حکومت تنازعہ کشمیر اور مقبوضہ علاقے میں بھارتی مظالم کو تمام بین الاقوامی فورمز پر اجاگر کرنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑے گی۔ نعیم خان نے تنازعہ کشمیر کو برصغیر پاک و ہند کی تقسیم کا نامکمل ایجنڈا قرار دیتے ہوئے کہا کہ ایک متحرک، مستحکم اور خوشحال پاکستان کا خواب اس وقت تک ادھورا رہے گا جب تک کشمیر کو بھارتی غلامی سے آزاد کر کے پاکستان کا حصہ نہیں بنایا جاتا۔
کل جماعتی حریت کانفرنس کے رہنما سید بشیر اندرابی نے سری نگر میں ایک بیان میں کہا کہ پاکستان کشمیریوں کا محسن ہے اورکشمیری مملکت خداد دادکا حصہ بننا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کشمیریوں کے حق خودارادیت کا علمبردار ہے جوگزشتہ کئی دہائیوں سے بین الاقوامی سطح پر ان کے منصفانہ مقصد کی حمایت کر رہا ہے۔ سید بشیر اندرابی نے کہا کہ تنازعہ کشمیر کو کشمیریوں کی امنگوں اور اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل کیے بغیر خطے میں پائیدار امن قائم نہیں ہو سکتا۔