کشمیریوں کو بدنام کرنے کی ایک سازش ہورہی ہے۔ فاروق عبداللہ عام شہریوں کی ہلاکتیں افسوسناک ہیں ، بے گناہوں کو مارا جارہا ہے

سری نگر() مقبوضہ کشمیر کے سابق وزیر اعلی  ڈاکٹر  فاروق عبداللہ نے کہا ہے کہ عام شہریوں کی ہلاکتوں میں کشمیریوں کا ہاتھ نہیں ہے،اور یہ حملے کشمیریوں کو بدنام کرنے کی ایک سازش کے تحت ہورہے ہیں۔تارزو سوپور میں ورکروں کے اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے فاروق عبداللہ نے کہا کہ ‘ عام شہریوں کی ہلاکتیں افسوسناک ہیں ، بے گناہوں کو مارا جارہا ہے’۔ان کا کہنا تھا کہ ‘ہلاکتیں ایک سازش کے تحت کی جارہی ہے، تاکہ کشمیری عوام کو بدنام کیا جائے’۔ ان کا کہنا تھا کہ ان واقعات سے ماحول کو خراب کیا جارہا ہے اور امن کے عمل کو نقصان پہنچایا جارہا ہے۔غور طلب ہے کہ گذشتہ دو ہفتوں میں وادی کشمیر میں 11عام شہری ہلاک ہوئے ہیں ہلاک شدگان میں تین غیر مقامی مزدور بھی شامل ہیں۔ہفتے کو سرینگر اور پلوامہ میں دو غیر مقامی مزدوروں کو ہلاک کیا گیا ۔ انہوں نے کہا کہ ‘کوئی بھی راستہ دوستی کی طرف لیے جائے وہ اچھا ہے’۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں دعا کرنی چاہیے کہ بھارت اور پاکستان کے مابین دوستی اور ہم آہنگی ہو، تاکہ کشمیری امن سے رہ سکیں’۔