لندن ، پیرس، برسلز، واشنگٹن میں بھارتی سفارتخانوں کے سامنے مظاہرے ہوں گے بھارتی سفارتخانوں کے سامنے بھر پور احتجاجی مظاہرے اور دھرنے دیے جائیں گے

لندن () لندن ، پیرس، برسلز، واشنگٹن اور کئی یورپی ممالک میں بھارتی سفارتخانوں کے سامنے کشمیری  آج (جمعرات کو) احتجاج کریں گے۔  مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کے خاتمے اور تقسیم کے خلاف   5  اگست کو کشمیری عوام یوم سیاہ کے موقع پر  بھارت کے خلاف احتجاج کریں گے ۔ ترجمان  جموں وکشمیر لبریشن فرنٹ   کے مطابق  ان مظاہروں میں کشمیریوں کے حق خودارادیت یاسین ملک سمیت جملہ اسیران کی رہائی، انسانی حقوق کی پامالیوں کی روک تھام اور ریاست کی مکمل آزادی کا مطالبہ دہرایا جائے گا۔کے پی آئی کے مطابق    لبریشن  فرنٹ کے  پلیٹ فارم پرآزاد کشمیر کے جملہ ضلعی مراکزاور پاکستان کے مختلف شہروں کے علاوہ گلگت شہرمیں احتجاجی ریلیاں اور مظاہرے منعقد ہوں گے جبکہ لندن ، پیرس، برسلز سمیت کئی یورپی ممالک اور واشنگٹن میں بھارتی سفارتخانوں کے سامنے بھر پور احتجاجی مظاہرے اور دھرنے دیے جائیں گے۔ سمندر پار زونز کے کچھ اہم شہروں میں تحریک ِآزادی کے حمایتی کئی غیر کشمیری مقامی تنظیموں و اشخاص نے کشمیریوں کی طرف سے بھارت کے خلاف مشترکہ عوامی مظاہروں کی نہ صرف حمایت بلکہ شرکت کرنے کا بھی اعلان کیا ہے۔ احتجاجی مظاہروں و ریلیوں میں 5  اگست 2019ء کے بھارتی جارح اقدام ، تہاڑ جیل میں غیر قانونی طور پر محبوس چیئرمین لبریشن فرنٹ محمد یاسین ملک سمیت جملہ اسیران کی مسلسل گرفتاری، جموں کشمیر میں تین دہائیوں سے زائد عرصہ سے جاری ریاستی دہشت گردی، سنگین انسانی حقوق کی پامالیوں اور حق ِ آزادی جیسے حق سے کشمیریوں کو محروم رکھنے کے خلاف آواز بلند کی جائے گی۔ ایک بیان میںجموں کشمیر لبریشن فرنٹ کے مرکزی کنویننگ کمیٹی کے سربراہ خواجہ سیف الدین نے 5  اگست بروز جمعرات یوم ِ سیاہ کے طور مناتے ہوئے بھارتی مقبوضہ جموں کشمیر کے عوام سے بھارتی جارحیت کے دو سال مکمل ہونے پرمکمل ہڑتا کی اپیل کی ہے