ڈیموکریٹک پولیٹیکل موومنٹ کا نظر بندکشمیریوںکی حالت زار پر اظہار تشویش

سرینگر29جنوری : بھارت کے غیر قانونی زیر قبضہ جموں وکشمیر میں ڈیموکریٹک پولیٹیکل موومنٹ (ڈی پی ایم)کے چیئرمین خواجہ فردوس نے مقبوضہ علاقے اور بھارتی جیلوںمیں غیر قانونی طورپر نظر بند کشمیریوں کی حالت زار پر تشویش ظاہر کرتے ہوئے کہاہے کہ نظر بندوں کو طبی سمیت تمام بنیادی سہولیات سے محروم رکھا گیا ہے۔ کشمیر میڈیاسروس کے مطابق خواجہ فردوس نے سرینگر سے جاری ایک بیان میں کہا کہ بھارت جان بوجھ کر نظر بندوںکی زندگیوں سے کھیل رہا ہے اور انہیں طرح طرح کے مصائب کا شکار بنارہا ہے۔ انہوں نے محمد یاسین ملک،شبیر احمد شاہ، آسیہ اندرابی ، فہمیدہ صوفی اور دیگر رہنماﺅں کی گرتی ہوئی صحت پر شدید تشویش ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ یہ رہنما متعدد بیماریوںکا شکار ہوچکے ہیں اور انہیں علاج معالجہ کی سہولت بھی میسر نہیں ہے ۔خواجہ فردوس نے مزید کہا کہ بھارت تحریک آزادی کو دبانے کیلئے اوچھے ہتھکنڈے استعمال کررہا ہے او راسکی فوج آئے روز نام نہاد تلاشی کارروائیوں کے دوران بے گناہ کشمیری نوجونوں کو گرفتار کرکے زندان خانوں میں اذیت کا نشانہ بنا رہی ہے ۔ انہوںنے کہاکہ کشمیر ایک سیاسی مسئلہ ہے جسے اقوام متحدہ کی قرار دادوں کے مطابق ہی حل کیا جاسکتا ہے۔ انہوںنے کہاکہ تنازعہ کشمیر کے حل میںسب سے بڑی رکاوٹ بھارت ہے جبکہ پاکستان اس کا کشمیری عوام کی خواہشات اور اقوام متحدہ کی قرار دادوںکےمطابق حل چاہتا ہے۔۔ انہوںنے عالمی برادری اور انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں پر زور دیا کہ وہ کشمیری نظربندوں کی رہائی کیلئے بھارت پر دباﺅ ڈالیں ۔خواجہ فردوس نے کہا کہ جنوبی ایشیاءمیں پائیدار امن کیلئے مسئلہ کشمیر کا حل ضروری ہے لہذا عالمی برادری خاص طور پر اقوام متحدہ کی یہ ذمہ دادری ہے کہ وہ اس مسئلے کے حل کے لیے اپنا کردار ادا کریں۔